urdu shayari

Urdu Shayari l Shayari In Urdu

Spread the love

Urdu Shayari

 

 

تیرے کمرے کے آئینے کو میں
دشمنوں میں شمار کرتا ہوں..

 

 

تیری طلب میں جلا ڈالے سارے آشیانے

کہاں رہوں میں تیرے دل میں گھر بنانے تک

 

 

 

 

پھولوں کے ساتھ اس لیے کانٹے لگے ہیں

دوستپھولوں پے ہاتھ سوچ کے ڈالا کرے کوئی

 

 

 

 

 

کیوں شرمندہ کرتے ہو رسمی باتیں پوچھ کر

حال ہمارا وہی ہے جو تم نے بنا رکھا ہے

 

 

 

ریزہ ریزہ ہے میرا عکس تو حیرت یہ ہے محسن
آئینہ سلامت ہے تو پھر ٹوٹا کیا ہے

 

 

 

میں نے سمجھا تھا کہ لوٹ آتے ہیں جانے والے
تو نے جا کر تو جدائی مری قسمت کر دی

 

 

 

اس کو رخصت تو کیا تھا مجھے معلوم نہ تھا
سارا گھر لے گیا گھر چھوڑ کے جانے والا

 

 

 

 

ارے کون کہتا ہے محبت کافر بنا دیتی ہے
مجھے سجدے میں رونا محبت نے سکھا ہے

 

 

معصوم سی آنکھيں پيارا سا چہرا اور اچھا اخلاق
يہ تو ہوئی ميری بات اور سناٸيں کيسے ہيں آپ؟

 

 

 

 

کیا کہوں اس کے بارے میں دل دکھایا ہے جس نے میرا

آگ بجھانے کو بھی وہ ہی آیا گھر جلایا جس نے میرا

 

 

 

 

فقط اس لیے ہم نے محفلوں میں جانا چھوڑ دیا۔۔
کہ کوئی پوچھ نہ لے وہ یار کہاں ہے جس پہ تم کو ناز تھا۔۔۔۔

 

 

 

 

دُکھ یہ ہےمیرے یوسف اور یعقوب کے خالق
وہ لوگ بھی بچھڑے ہیں جو بچھڑ نے کے لیے نہیں تھے

 

 

 

 

تیری جدائی کے شکوے میں کس سے کروں
یہاں ہر کوئی اب بھی تجھے میرا سمجھتا ہے

 

 

 

 

 

محبت میں حرف با حرف مجھے مانگنا نہیں آتا

میں نے آداب دعا سے بہت آگے تجھے چاہا ہے۔

 

 

 

 

 

سانس میری الجھ جاتی ہے
جب تیرا نام کوئی اور لیتا ہے

 

 

urdu shayari

 

 

پتھر کی ہے دنیا جزبات نہیں سمجتی دل میں کیا ہے یہ بات نہیں

سمجتی تنہا تو چاند بھی ہے ستاروں کے بیچ لیکن چاند کا درد بے وفا رات نہیں سمجتی

 

 

 

 

محبوب نے زخم دیے تو پھر کیا ہوا

صاحب کیا پھولوں کے ساتھ کانٹے نہیں ہوتے

 

قدر نہ جانی ہم نے اپنی,یوں

کہ میسر تھے ہم ایسوں ویسوں کو

 

 

کس منہ سے میرے یار کہوں تجھ کو الوداع
مجھ سے زباں پہ لفظ یہ لایا نا جائیگا

 

وہ ہمیں چھوڑ کے اک شام گئے تھےصنم
زندگی اپنی اُسی شام سے آگے نہ بڑھی

 

وقت ایک سا نہیں رہتا سن لے اے زندگی
خود بھی رو پڑتے ہیں دوسروں رلانے والے

 

مانا کہ تیری دید کے قابل نہیں ہوں میں
تو میرا شوق دیکھ مرا انتظار دیکھ

 

 

وہ زمانے بھر کو محبت بانٹنے نکلے ہم نے

ہاتھ پھیلایا۔! تو بولے تُم مُستحق نہیں

 

 

محبت بسا کر میری آنکھوں میں
سانس سانس کا وہ مجھے محتاج کر گیا

 

ہتھ دل تے رکھ کے ویکھ تاں سہی
ہر ساہ تے تیرا ای ناں لکھیا

 

نہ سمجھو گے تو مٹ جاؤ گے اے ہندوستاں والو
تمہاری داستاں تک بھی نہ ہوگی داستانوں میں

 

اس دشمن  وفا کو دعا دے رہا ہوں میں
میرا نہ ہوسکا وہ کسی کا تو ہوگیا

 

میری نظر بھی کمال کی ہے۔۔۔
جس پہ رکھتا ہوں اٗس کی منگنی ہو جاتی ہے

 

 

 

 

جتن میں لاکھ کرتی ہوں ہنسی لاؤں میں چہرے

پہ مگر تیری محبت کی کمی ، ہمیشہ مات دیتی ہے

 

افسوس یہ تو نہیں کہ دھوکا ملا افسوس یہ ہے کہ ہم مخلص تھے

 

ابھی راہ میں کئی موڑ ہیں کوئی آئے گا کوئی جائے گا
تمہیں جس نے دل سے بھلا دیااسے بھولنے کی دعا کرو

 

 

urdu shayari

 

 

تری معصوم نگاہوں کے تقدس کی قسم
دل تو کیا روح نے بھی تجھ سے محبت کی ہے

 

 

 

کب ٹھہرے گا درد اے دل کب رات بسر ہوگی
سنتے تھے وہ آئیں گے سنتے تھے سحر ہوگی

 

 

جس کے دم سے ہے رونق میری تحریروں میں
…وہی ایک شخص نہیں ہاتھ کی لکیروں میں

 

 

اُمیدیں آرزویں کھیلتی ہیں یوں میرے دل سے
پلٹ جاتی ہیں موجیں جس طراح ٹکرا کے ساحل سے

 

 

ہزاروں پتھر گرے میرے آنگن میں ۔۔۔ مگر میں

انہیں تلاش کر رہا ہوں جو تم نے مارے تھے۔۔۔

 

 

سوہنڑے رب دی ہر شۓ سوہنڑی اے 🏻
مینوں سب تو سوہنڑا تو لگنا ایں

 

 

 

 

 

کچھ درد کی شدت ہے کچھ پاس محبت ہے
ہم آہ تو کرتے ہیں  فریاد نہیں کرتے

 

 

بک گئے ہم تو اس کے ہاتھ
صرف دو بول محبت میں

 

 

حصارِ ذات کوئی راستہ تو دے مجھ کو
بڑے دنوں  سے تمنا ہے  خود کو پانے کی.

 

 

سجنے سنورنے کی تمہیں کیا ضرورت ہے…..!
تم تو سادگی میں بھی قتل عام کرتی ہو……!!

 

 

اب یہ بھی نہیں ٹھیک کہ ہر درد مٹا دیں
کچھ درد کلیجے سے لگانے کے لیے ہیں

 

تجھ سے نہیں تیرے وقت سے ناراض ہوں
جو کبھی بھی تجھے میرے لیے نہیں ملتا

 

آخر دعا کریں بھی تو کس مدعا کے ساتھ
کیسے زمیں کی بات کہیں آسماں سے ہم

 

 

عمر بھر کانٹے اٹھائے جن کی راہوں سے
آگ دے کر آشیاں کو وہ ہوا دیتے رہے

 

اک رات وہ گیا تھا جہاں بات روک کے
اب تک رکا ہوا ہوں وہیں رات روک کے

 

 

 

یہ بھی اک تماشہ ہے عشق و محبت میں ۔
دل کسی کا ہوتا ہے اور بس کسی کا چلتا ہے۔

 

 

چہرے اجنبی ہو جائیں تو انسان کو اتنا فرق نہیں پڑتا لیکن جب لہجے اجنبی ہو جائیں تب بہت تکلیف دیتے ہیں

Shayari In Urdu

 

 

تم سے ہی تھی تم سے ہی ہے
محبت جو تھی محبت جو ہے

 

 

اک منفرد طریقے سے مسترد کیا گیا مجھے ۔ آپ بہت اچھے ہیں پر میں آپ کے قابل نہیں

 

 

ہمیشہ  کےلئے بچھڑاہے کوئی
جُدائی گونجتی ہےجسم و جاں میں

 

 

عشق نچاوے ناچ انوکھا
میں ہس ہس روندی جاواں

 

ہم آہ بھی کرتے ہیں تو ہو جاتے ہیں بد نام
وہ قتل بھی کرتے ہیں تو چرچا نہیں ہوتا

 

 

بہت پچھتاے اس کے دروازے پر دستک دے کر درد کی انتہا ھو گئ جب اس نے کہا کون ھو تم

 

‏تم جو ہوتے کبھی ساتھ نبھانے والے محبتوں میں ہمارا قصہ مثال ہوتا_

 

 

 

جب  شاہ  کے  محل  میں طوائفوں  کے  بسیرے  ہونگے

مزدور کی جھونپڑی میں تو افلاس کے اندھیرے ہونگے

 

 

کہنا ہی پڑا اُن کو پڑھ کر شعر ہمارے..
کمبخت ! کی ہر بات محبت سے بھری ہے

 

 

 

جو زہر پی چکا ہوں تم ہی نے مجھے دیا
اب تم تو زندگی کی دعائیں مجھے نہ دو

 

 

 

کیوں اک دعا میں اٹک گیا ہے دل کیوں تیرے سوا کچھ اور مانگا نہیں جاتا

urdu shayari

 

 

 

میں تم کو بھول تو جاؤں مگر چھوٹی سی الجھن ھے سنا ھے دل سے دھڑکن کی جدائی موت ھوتی ھے

 

 

 

وفائیں سیکھ لو ہم سے ۔۔۔۔
کہیں کرنی نا پڑ جائیں ۔۔۔!!

 

 

 

درد اٹھتا ہے تو تصور میں آ جاتے ہیں وہ
خدا میرے درد کی عمر دراز کرے

 

 

 

کس کس کو بتائیں  گے جدائی کا سبب ہم
تو مجھ سے خفا ہے تو زمانے کے لیے آ

 

 

 

بات کرنا اور پھر مکرجانا
اہلِ کوفہ کا سایہ ہے تجھ پر

 

 

 

صرف محبت ہی ایسا کھیل ہے
جو سیکھ جاتا ہے وہی ہار جاتا ہے

 

 

 

تم سے ملنا ضروری نہیں تھا
تمہارا مل جانا—ضروری تھا

 

 

 

‏ہاتھ آ نہ سکی پیار کی خیرات آج تک ہم کاسہ خلوص لئیے دربدر پھرے

 

 

 

‏یونہی نہیں روتا کوئی صاحب..,
عشق اندر سے اجاڑ دیتا ہے,,..,

 

 

 

تیرے بعد میں جس کا ہوگیا
پگلی اسی کا نام اداسی ہے

 

 

 

اِک کالیاں راتاں ، اِک سرد مہینہ
ترا ہجر وچھوڑا ، میرا ساڑے سینہ

 

 

 

نہ پکاریں گے تمہیں ہم سے یہ وعدہ لے لو شرط یہ ہے کہ کبھی یاد نہ آنا تم بھی

 

 

 

 

آؤ آنکھیں ملا کے دیکھتے ہیں
کون …… کتنا اداس رہتا ہے

 

 

 

 

وہ نہ آئے گا ہمیں معلوم تھا اس شام بھی
انتظار اس کا مگر کچھ سوچ کر کرتے رہے

 

 

 

 

ہمت اتنی تھی کہ سمندر بھی پار کر سکتے تھے مجبور اتنے ہوئے کہ دو بوند آنسووں نے ڈوبوں دیا ہمیں

 

 

 

میری طلب تھا ایک شخص وہ جو نہیں ملا تو پھر
ہاتھ دعا سے یوں گرا بھول گیا سوال بھی

 

 

 

 

وہی رات بھر تذکرہ تھا تمہارا
وہی نیند بیٹھی رہی منہ بنا کے

 

 

 

‏ہماری موت بھی کیا موت ہوگی
تم پہ مرتے ہوئے ,, مر جائیں گے

 

 

 

اس سادگی پہ کون نہ مر جائے اے خدا
لڑتے ہیں اور ہاتھ میں تلوار بھی نہیں

 

 

 

اچھا خاصا بیٹھے بیٹھے گم ہو جاتا ہوں
اب میں اکثر میں نہیں رہتا تم ہو جاتا ہوں

urdu shayari

 

 

چہرہ وہی رہا مگر آنکھیں بدل گئیں
اک پل میں مجھ کو جان سے انجان کر گیا

 

 

 

اس کو جدا ہوئے بھی  زمانہ بہت  ہوا
اب کیا کہیں یہ قصہ پرانا بہت ہوا

 

 

 

پھر نیا ہاتھ تھاما اس نے
پھر ہاتھوں کو جلایا میں نے

 

 

 

اس نے تو ایک ہی آواز میں آجانا تھا مجھ سے گم ہو گئے الفاظ بلانے والے

 

 

 

 

کاش کہ تیری دنیا مجھ سے مجھ ہی تک ہوتی اور ہم تجھے تیرا بھی نہ ہونے دیتے

 

 

 

میـں وہ محروم عنایات ہوں کہ جس نـے تجھ سـے ملنا چاہا تو بچھڑنـے کی وبا پھوٹ پڑی

 

 

 

 

کبهی آ کے تهوڑا وقت میرے ساتهہ گزار جتنا تو نے سنا هے اتنا برا نہیں هوں میں

 

 

 

ابھی زندہ ہے ماں میری مجھے کچھ بھی نہیں ہوگا
میں گھر سے جب نکلتا ہوں دعا بھی ساتھ چلتی ہے

 

 

 

تیرے گمان تک بھی نہیں وہ
جو درد سہہ بھی لیئے ہم نے

 

 

 

 

دشمنی میں دوستی کا سلسلہ رہنے دیا اس کے سارے خط جلا دیئے مگر پتہ رہنے دیا

 

 

 

تقدیر سے ھوں لاچار اے ذُوق تمنا ۔۔۔
ہر فن میں ھوں ماہر بس محبت نہیں آتی ۔۔۔

 

 

 

 

فرض کرو میں کھو جاؤں
یقین دلاؤ۔۔۔ڈھونڈو گے

 

 

 

جس کی آنکھوں میں  کٹی تھیں  صدیاں
اس نے صدیوں کی جدائی دی ہے

 

 

 

 

دوستوں کے دوست یاروں کے یار رہیں گے
کل بھی سدا بہار تھے ہمیشہ سدا بہار رہیں گے

 

 

 

کہیں وہ آ کے مٹا دیں نہ انتظار کا لطف
کہیں قبول نہ ہو جائے التجا میری

 

 

 

 

یاد کر کے مجھے اپنی آنکھ نم نہیں کرنا
دیکھ اس جدائی کا کوئی غم نہیں کرنا

 

 

 

عشق__ڈھونڈتا_ہے_____ہمیں
در__بدر _______گلی __گلی

 

 

 

 

اب یہ بھی نہیں ٹھیک کہ ہر درد مٹا دیں
کچھ درد کلیجے سے لگانے کے لیے ہیں

 

 

 

‏اک نظر بچھڑنے سے پہلے اسے غور سے دیکھا میں نے اس کی آنکھوں میں اجازت کے سوا کچھ نہ تھا

 

 

 

کی محمد سے وفا تو نے تو ہم تیرے ہیں
یہ جہاں چیز ہے کیا لوح و قلم تیرے ہیں

 

 

 

 

وہ جو اُٹھاتے ہیں کردار پر اُنگلیاں
تخفے میں اُن کو آئینہ دیجئیے

 

 

 

 

کچھ درد لا جواب ہیں
کچھ میں بھی بے مثال ہوں

 

 

 

 

نہیں ہے ناامید اقبالؔ اپنی کشت ویراں سے
ذرا نم ہو تو یہ مٹی بہت زرخیز ہے ساقی

 

 

 

 

میں بہت جلد بڑھاپے میں چلا آیا تھا بن ترے عمر کی رفتار بڑھانی پڑی تھی

 

 

 

میں نے دن رات خدا سے یہ دعا مانگی تھی
کوئی آہٹ نہ ہودر پر مرےجب تو آئے

 

 

 

 

جل جاتے ہیں لوگ آج بھی ہمیں دیکھ کر
کیونکہ اک مدت سے ہم نے اپنا یار نہیں بدلا

urdu shayari

 

 

 

آؤ نا مل کر ____ ڈھونڈ لائیں
کوئی وجہ پھر سے ایک ہونے کی ️

 

 

 

 

یوں لگے دوست تیرا  مجھ سے خفا ہو جانا
جس طرح پھول سے خوشبوں کا جدا ہونا

 

 

 

اس کو کھونے کا بہت دکھ ہے مگر ہم اسے پانے کے اسباب کہاں سے لاتے

 

 

 

داستان ختم ہونے والی ہے
تم میری آخری محبت ہو

 

 

 

میں تم سے عشق کر بیٹھا ہوں
آدم زاد ہوں, بھول کر بیٹھا ہوں

 

 

 

‏اک نظر بچھڑنے سے پہلے اسے غور سے دیکھا میں نے اس کی آنکھوں میں اجازت کے سوا کچھ نہ تھا

 

 

 

‏وہ کبھی لوٹ کر چلا آئے
یہ میں اب فرض بھی نہیں کرتا

urdu shayari

 

 

آپ چاہتے ہیں عمر بھر یاد رکھوں آپ کو
آپ ایسا کیجۓ مجھ کو دھوکا دیجۓ

 

 

 

ہم سے ملنے میں اک خرابی ہے
پھر کسی اور کے نہیں رہو گے تم

 

 

 

یونہی آنکھوں سے آنسو نہیں گرتے
عشق اس قدر مجبور کر دیتا ہے

 

 

 

اسے یہ شکوہ کہ میں اسے سمجھ نہ سکی مجھے یہ مان کہ میں جانتی فقط اسی کو تھی

 

 

 

وہ آ رہے ہیں وہ آتے ہی آ رہے ہوں گے
شب فراق یہ کہہ کر گزار دی ہم نے

 

 

 

رکے رکے سے قدم رک کے بار بار چلے
قرار دے کےترے در سے بےقرار چلے

 

 

 

نہ جانے کس جرم کی سزا دی اس بے وفا نے اب نہ نیند آتی ہے اور نہ جاگ سکتے ہیں

 

 

 

فرقہ بندی ہے کہیں اور کہیں ذاتیں ہیںکیا زمانے میں پنپنے کی یہی باتیں ہیں

 

 

 

اے زندگی تیرے تسلسل میں ہم نے وہ لوگ بھی کھوئے جو سانس کی مانند تھے

urdu shayari

 

 

 

اپنے چہرے سے جو ظاہر ہے چھپائیں کیسے
تیری مرضی کے مطابق نظر آئیں کیسے

 

 

 

اس راہِ محبت کی تم بات نہ پوچھو، 
انمول جو انساں تھے بے مول بِکےھیں،

 

 

 

غنیمت سمجھ تو صبر مرا ابھی میں لَبا لَب بھرا نہی

ں وہ مجھے مردہ سمجھ رہا ہے پر ابھی میں مرا نہیں

 

 

 

جب بھی تیری قربت کے امکاں نظر آئے
ہم اتنا خوش ہوئے کہ پریشاں نظر آے

 

 

 

جو لوگ نصیب میں نہیں ہوتے
ان سے محبت کمال کی ہوتی ہے

 

 

 

میں  زندگی کی دعا مانگنے لگا ہوں بہت
جو ہوسکے دعاؤں کو بے اثر کردے

urdu shayari

 

 

 

یہ ٖغم نہیں ہے کہ ہم دونوں ایک ہونہ سکے
یہ رنج ہے کہ کوئی درمیان میں  بھی نہ تھا

 

 

 

بیوی آپ کو چکن بنا دوں
شوہر نہیں میں انسان ہی ٹھیک ہوں
بڑی آئی جادوگرنی
🤣🤣🤣🤣🤣

 

 

 

 

تجھ سے ملتا ہوں تو سوچتا ہوں
کہ وقت کے پاؤں میں زنجیر ڈالوں کیسے

 

 

 

‏عجیب سی بندش ہے اس کی محبت میں
نہ وه قید کر سکا نہ هم آزاد ہو سکے

 

 

 

 

دکھ تب ہوتا ہے، جب ہماری نیت صاف ہو ، اور کوئی ہمیں غلط سمجھے ،

urdu shayari

 

 

 

مٹی دا توں مٹی ہونا  کاہدی بَلے بَلے
اج مٹی دے اُتے بندیا کل مٹی دے تھلے

 

 

 

کچھ تو حساب کرو صاحب۔۔
اتنی محبت اُدھار کون دیتا ہے۔۔۔

 

 

 

اس کو تو بچھڑنے کا طریقہ بھی نہیں آتا
جاتے جاتے خود کو میرے دل میں ہی چھوڑ گیا

 

 

 

اے شمع ہم سے ضبط محبت کا ہنر سیکھ کمبخت تو ایک ہی رات میں ساری جل گٸ

 

 

 

تم نے دیا تحفہ جو مجھے جدائی کا
بن گیا وہ میرا ساتھی تنہائی کا

urdu shayari

 

 

 

گڈی چلدی روک گئی اے
مطلب رہ گئے نے ہمدردی مک گئی اے

 

 

 

برستی ہوئی بارش اور روتی ہوئی آنکھوں کا احساس صرف ان ہی کو ہوتا ہے جن کے گھر کچے اور دل نازک ہوتے ہیں۔

 

 

 

سر اٹھا کر چلنے کی عادت ہے صاحب
کیوں کے ہمارے یار ہمارا سر جھکنے نہیں دیتے

 

 

 

تُو مجھ کو جوڑ دے یا رب
میں خود کو توڑ بیٹھا ہوں

urdu shayari

 

 

 

‏رات ہاتهوں میں جب ہاتھ تمہارا تها
مانو خواب وہ زندگی سے پیارا تها

 

 

 

مری بہار مںک عالم خزاں کا  رہتا ہے
ہوا جو وصل تو کھٹکا رہا جدائی کا

 

 

 

ﺍُﺩﺍﺳﯽ ﻭﺯﻥ ﺭﮐﮭﺘﯽ ﮨﮯ ، ﺟﮕﮧ ﺑﮭﯽ ﮔﮭﯿﺮﺗﯽ ﮨﮯ
ﮨﻤﯿﮟ ﮐﻤﺮﮮ ﮐﻮ ﺧﺎﻟﯽ ﭼﮭﻮﮌ ﮐﺮ ﺟﺎﻧﺎ ﭘﮍﮮ ﮔﺎ

urdu shayari

 

 

 

پیار پر بس تو نہیں ہے مرا لیکن پھر بھی
تو بتا دے کہ تجھے پیار کروں یا نہ کروں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *